اہم خبریںپاکستانسیاست

نومبر میں حکومت ختم ہونےکی پیشنگوئی کے بعد پی ٹی آئی حکومت کو پہلا استعفیٰ موصول ،وزیراعظم کا قریبی ساتھی مستعفی

اسلام آباد:(اعجازعلی ساغرسے) وزیراعظم کے معاون خصوصی فہد ہارون نے استعفیٰ دے دیا۔تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کے پاس ایک اور استعفیٰ آگیا ذرائع کے مطابق وزیراعظم کے معاون خصوصی فہد ہارون ذاتی وجوہات کی بناء پر عہدے سے مستعفی ہوگئے ہیں فہد ہارون وزیراعظم کے فوکل پرسن برائے میڈیا کام کر رہے تھے یہاں واضح رہے کہ وزیراعظم کی کابینہ میں معاون خصوصی اور مشیروں کی بڑی تعداد ہے۔05 اکتوبر 2020ء کو ڈاکٹر وقار مسعود خان کو معاون خصوصی برائے محصولات تعینات کیا گیا جس کے بعد وزیراعظم عمران خان کی کابینہ میں ایک اور معاون خصوصی کا اضافہ ہوگیا تھا اس نئی تعیناتی کے ساتھ ہی وزیراعظم عمران خان کی کابینہ میں ایک اور غیر منتخب شخصیت کا اضافہ ہوا تھا، جس کے بعد کابینہ میں غیر منتخب افراد کی تعداد بڑھ کر 20 ہوگئی ، جس کے بعد کابینہ کا مجموعی حجم بڑھ کر 52 ہوگیا جس میں سے 20 افراد غیر منتخب ہیں، ڈاکٹر وقار مسعود خان کی اس تعیناتی سے قبل وفاقی کابینہ میں وزراء کی کل تعداد 27 ، وزرائے مملکت 4 جب کہ مشیروں کی تعداد 5 تھی ، جب کہ اس کے بعد وزیراعظم کے معاونین خصوصی کی تعداد 16 ہوچکی تھی، وزیراعظم عمران خان کے 2 معاونین کے پاس وفاقی وزیر کا درجہ ہے جن میں معاون خصوصی برائے سماجی تحفظ ثانیہ نشتر اور معاون خصوصی برائے اسٹیبلشمنٹ شہزاد ارباب شامل ہیں یاد رہے کہ وزیراعظم نے 6 اہم وزارتوں کا قلمدان اپنے پاس رکھا ہوا ہے، وزیراعظم تجارت، ماحولیاتی تبدیلی، پارلیمانی امور، خزانہ اور وزارت صحت کے وزیر بھی ہیں جب کہ وزارت سمندر پار پاکستانیز کا قلمدان بھی ان کے پاس ہے۔موجودہ حکومت کے اقتدار میں آنے کے بعد ابتدائی طور پر 16رکنی کابینہ نے عہدوں کا حلف اٹھایا تھا جس کے بعد سے کابینہ کے حجم میں مسلسل اضافہ ہوتا گیا اور یہ تعداد 52 تک پہنچ گئی تھی۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button