اہم خبریں

آرمی چیف کی تعیناتی کا معاملہ، پی ٹی آئی کے چیف آف سٹاف کا اہم بیان

چیئرمین تحریک انصاف کے چیف آف سٹاف سینیٹر شبلی فراز نے کہا ہے کہ آرمی چیف کی تعینات میں پی ٹی آئی رکاوٹ نہیں ڈالے گی۔میڈیا رپورٹس کے مطابق شبلی فراز سے سوال کیا گیا کہ کیا صدرِ مملکت کی جانب سے آرمی چیف کی تعیناتی میں کوئی رکاوٹ ڈالی جائے گی؟۔جس کے جواب میں انہوں نے کہا کہ آرمی چیف کی تعینات میں تحریک انصاف کی جانب سے کوئی رکاوٹ نہیں ڈالی جائے گی۔شبلی فراز نے مزید کہا کہ جو بھی تعیناتی کا عمل ہے وہ آئین اور قانون کے مطابق ہو گا۔قانون کو مطلوب شخص سے اگر وزیراعظم مشورہ کر سکتا ہے تو پھر صدر پی ٹی آئی کے نامزد کردہ ہیں۔صدر تو یوں پورے پاکستان کے ہیں لیکن عمران خان کے ساتگ مشورہ کرنا ان کا حق ہے۔خیال رہے کہ لیفٹننٹ جنرل سید عاصم منیر کو آرمی چیف مقرر کر دیا گیا ہے۔اس حوالے سے وفاقی وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب نے تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ لیفٹننٹ جنرل عاصم منیر کو چیف آف دی آرمی سٹاف مقرر کر دیا گیا ہے۔جب کہ لیفٹننٹ جنرل ساحر شمشاد مرزا چئیرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف ہوں گے۔وزیراعظم شہباز شریف نے سمری صدرِ مملکت کو بھیج دی ہے۔ اس حوالے سے وفاقی وزراء کا کہنا ہے کہ صدرِ مملکت کو اب کوئی نیا تنازع کھڑا کرنے کی بجائے آئینی کردار ادا کرنا چاہئیے۔گذشتہ روز ایک انٹرویو میں وزیر خزانہ اسحاق ڈار کا کہنا تھا کہ صدر عارف علوی سمری پر دستخط نہیں کرتے تو ان کے پاس دوسرا پلان موجود ہے۔انتظار کے باوجود فیصلہ تبدیل نہیں ہو گا۔ امید ہے صدر مملکت اپنی آئینی ذمہ داری پوری کریں گے۔ جبکہ وزیر دفاع خواجہ آصف کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم شہباز شریف نے دونوں اعلٰی تقرریوں کیلئے ایڈوائس صدر مملکت کو بھجوا دی ہے،صدر مملکت عارف علوی کو تعیناتیوں سے متعلق سمری ارسال کی گئی۔قانون اور آئین کے تحت سارے معاملات طے پائیں گے،آئینی ادارے کو متنازعہ نہیں بنانا چاہیے۔ خواجہ آصف نے میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ امید ہے صدر مملکت کوئی تنازع کھڑا نہیں کریں گے اور یہ بھی امید کرتے ہیں کہ صدر مملکت آئینی تعیناتی کو سیاسی نہیں کریں گے۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button