شاعریکالمز

آج دل نےبہت مدت کےبعد

شگفتہ خان بھلوال

آج دل نےبہت مدت کےبعد
سماعتوں میں اپنی
تیری آواز کا رس گھولناچاہا
اور جب تیری آواز سنی
تو دھڑکن تھمنےلگی
اتنی اجنبیت، اتنی درشتگی
اتنابیگانہ پن
کہ آنکھ بھر آئی
جھک کے بےساختہ دل کودیکھا
جیسے سہما ہوا اک بچہ
خوف سے زرد چہرہ
کپکپاتے ہوئےلب اور
ڈبڈبائی ہوئی آنکھیں
بھیگے لہجے میں سوال کرتے ہیں
"میری محبت کےرنگ
اتنے کچےتو نہ تھے
کہ اتنی آسانی سے پھیکے پڑتے!”

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button